مشت زنی کے نقصانات

مشت زنی کرنے والے دور سے ہی پہچانے جاتے ہیں کیونکہ ان کے چہرے کی خوبصورتی ، حسن و رعنائی گہنا کر انہیں ہمیشہ کا مریض بنا دیتی ہے۔ اس سے انسان کے اندر ہمہ وقت تھکن ، نا امیدی ، مرجھاہت چمکتی نظر آتی ہے ۔آنکھوں کے گرد سیاہ حلقے پڑ جاتے ہیں۔ پیشاب تیز اور جلا ہوا آتا ہے۔

Mushat Zani karne walay daur se hi pehchane jatay hain kyunkay un ke chehray ki khoubsurti, husn o ranayi gehna kar inhen hamesha ka mareez bana deti hai. Is se ensaan ke andar hama waqt thakan, na umeedi, murjahat chamakti nazar aati hai. Aankhon ke gird siyah halqay par jatay hain. Pishaab taiz ar jala huwa aata hai.

اس تحریر میں ہم بات کریں گے کہ مشت زنی  اور خود لذتی کے نقصانات کیا ہیں۔ مشت زنی سے انسانی صحت پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ مشت زنی کیوں خطرناک ہے۔ مشت زنی یا مٹھ مارنے سے انسانی صحت کو کیا نقصان پہنچتا ہے۔

Is tehreer mein hum baat karen ge ke masht zani aur khud lazzati ke nuqsanaat kya hain. Masht zani se insani sahet par kya asraat muratab hotay hain. Masht zani kyun khatarnaak hai. Masht zani ya muth maarny se insani sahet ko kya nuqsaan pohanchana hai.

یہ برا فعل صحت کو اس حد تک خراب کر دیتا ہے کہ اس فعل کا ارتکاب کرنے والےحضرات شادی کے نام سے بھاگتے ہیں، کیونکہ خرابی صحت کی وجہ سے انہیں پتا ہوتا ہے کہ وہ ازدوجی زندگی کے معاملات کی انجام دہی میں ناکام رہیں گے۔

Ye bura feal sahet ko is had taq kharab kar deta hai ke is feal ka irtikaab karne walay hazraat shadi ke naam se bhagtay hain, kyunkay kharabi sahet ki wajah se inhen pata hota hai ke wo azdowaji zindagi ke mamlaat ki injaam dahi mein nakaam rahen ge.

خرابی صحت کی وجہ سے ایسے افراد اپنا علاج کروانے کے لیے جھوٹے ڈاکٹروں اور حکیموں کے پاس پہنچ جاتے ہیں، جو انہیں دل کھول کر لوٹتے ہیں۔ اس کے باوجود بھی نہ تو ان کا علاج ہو پاتا ہے اور نہ ہی ان کی بری عادت ختم ہو پاتی ہے۔

Kharabi sahet ki wajah se aisay afraad apna ilaaj karwane ke liye jhutay doctoron aur hakeemon ke paas poanch jatay hain, jo inhen dil khol kar lottay hain. Is ke bawajood bhi na to un ka ilaaj ho paata hai aur na hi un ki buri aadat khatam ho paati hai.

مشت زنی سے نہ صرف جسمانی صحت خراب ہوتی ہے بلکہ اس کے برے اثرات نازک اعضاء پر بھی مرتب ہوتے ہیں۔ جس سے نہ صرف عضو خاص ٹیڑھا اور جڑ سے پتلا ہو جاتا ہے بلکہ قوت باہ میں بھی کمی ہو جاتی ہے۔ قوت باہ میں اضافے کے لئے آپ ہماری تحریر قوت باہ کیا ہے، مردانہ قوت باہ میں اضافے کے قدرتی طریقے پڑھ سکتے ہیں۔

Musht Zani se na sirf jismani sahet kharab hoti hai balkay is ke buray asraat naazuk aaza prbhi muratab hotay hain. Jis se na sirf uzoo khaas terha aur jarr se patla ho jata hai balkay qowat baah mein bhi kami ho jati hai.

جب کوئی نوجوان مشت زنی کرتا ہے تو عضو خاص کی باریک شریانیں یا تو پچک جاتی ہیں یا پھر کوئی شریان پھٹ کر اس کا خون شریان میں جم جاتا ہے جس سے شریان میں خون کی آمد و رفعت معطل ہوجاتی ہے ۔

Jab koi nojawan masht zani karta hai to uzoo khas ki bareek shareyanien ya to pichak jati hain ya phir koi shariyan phatt kar is ka khoon shariyan mein jim jata hai jis se shariyan mein khoon ki aamad o Riffat moattal ho jati hai.

مشت زنی سے عضو کے پٹھوں میں سکڑنے اور پھیلنے کی صلاحیت ختم ہو جاتی ہے جس سے پٹھوں میں تناؤ نہیں آتا۔ شریانوں میں خون کے نہ پہنچنے ، پٹھوں میں تناؤ نہ آنے اور جلد ڈھیلی ہونے کے باعث عضو تناسل کا اکڑاؤ ، سختی ، تناؤ اور جوش بالکل ختم ہوجاتا ہے۔

Musht zani se uzoo ke pathon mein sukarnay aur phelnay ki salahiyat khatam ho jati hai jis se pathon mein tanao nahi aata. sharianon mein khoon ke na pounchanay, pathon mein tanao nah anay aur jald dheeli honay ke baais uzoo tanasul ka akraao, sakhti, tanao aur josh bilkul khatam ho jata hai.

زیادہ تر نوجوان باتھ روم میں مشت زنی کرتے ہیں یعنی مٹھ مارتے ہیں اور پھر فوراً ہی اپنے عضو کو پانی سے دھو لیتے ہیں اس طرح گرم عضو پر ٹھنڈا پانی لگنے سے عضو کے پٹھے ناکارہ ہو جاتے ہیں۔ مشت زنی یا اغلام بازی جیسے گندے فعل کے باعث نہ صرف عضو کا اکڑاؤ ختم ہوجاتا ہے بلکہ اس کاسائز بھی چھوٹا ہوجاتا ہے اور یہ جڑ سے پتلا اور ٹیڑھا ہوکر مرد کے لئے شرمندگی کا سبب بنتا ہے

Ziyada tar nojawan baath room mein masht zani karte hain aur phir foran hi apne uzoo ko pani se dho letay hain is terha garam uzoo par thanda pani lagnay se uzoo ke pathay nakara ho jatay hain. masht zani ya ighlaam baazi jaisay ganday feal ke baais nah sirf uzoo ka akrao khatam ho jata hai balkay is ka size  bhi chota ho jata hai aur ye jarr se patla aur terha ho kar mard ke liye sharmindagi ka sabab bantaa hai

اس مرض میں مبتلا افراد ہر وقت پریشان رہتے ہیں، کسی کام میں دل نہیں لگتا، دماغ اور قوت حافظہ بہت کمزور ہو جاتا ہے۔ اس برے فعل کے مرتکب افراد ذلت آمیز زندگی گزارتے ہوئے ایک ایسی حد تک پہنچ جاتے ہیں جہاں انہیں خود کشی کے سوا کوئی راہ نظر نہیں آتی۔

Is marz mein mubtala afraad har waqt pareshan rehtay hain, kisi kaam mein dil nahi lagta, dimagh aur qowat hafza bohat kamzor ho jata hai. Is buray feal ke murtakib afraad zillat amaiz zindagi guzartay hue aik aisi had taq poanch jatay hain jahan inhen khud kashi ke siwa koi hal nahi hota.

ہومیو ڈاکٹر علی اصغر چوہدری نوجوانوں کے مسائل اور ان کے حل میں لکھتے ہیں: “مشت زنی سے خود اعتمادی اور قوت ارادی ختم ہو جاتی ہے۔ دماغ اور بینائی کمزور ہو جاتی ہے۔ذہنی الجھنیں بڑھ جاتی ہیں۔ فرد تنہائی پسند ہو کر زندگی کے ہنگاموں سے کنارہ کش ہو جاتا ہے۔ عضو مخصوص کی رگیں ابھر آتی ہیں اور ٹیڑھا ہو جاتا ہے۔ درمیان میں سے پتلا ہو جاتا ہے۔ ایسے لڑکے جوان ہو کر عموماً اخلاقی مجرم بن جاتے ہیں۔ مطالعہ کرنے کو جی نہیں چاہتا، کچھ یاد نہیں رہتا۔

Doctor Ali asghar chohadry likhate hain: “Masht Zani se khud itmadi aur qowat iraadi khatam ho jati hai.Dimagh aur benaye kamzor ho jati hai. zehni uljhanein barh jati hain. fard tanhai pasand ho kar zindagi ke hungamon se kinara kash ho jata hai. uzoo makhsoos ki ragein ubhar aati hain aur tehrra ho jata hai. Darmain mein se patla ho jata hai, aisay larke jawan ho kar umooman ikhlaqi mujrim ban jatay hain. mutalea karne ko jee nahi chahta, kuch yaad nahi rehta.

بے چینی ، اداسی ، افسردگی ، مایوسی، گھبراہٹ اور جھجک اس پر طاری ہو جاتی ہے۔ کھیلوں میں حصہ لینے سے کتراتے ہیں، مشت زنی سے جریان، احتلام، سرعت انزال اور نامردی تک کے امراض پیدا ہو سکتے ہیں۔ معدہ خراب ہو جاتا ہے۔ بھوک مر جاتی ہے۔ رات کو وحشت ناک خواب آتے ہیں۔ چہرہ ہر وقت بے رونق رہتا ہے۔ گال پچک جاتے ہیں اور انسان زندہ لاش بن کر رہ جاتا ہے”

Be cheeni, Udasi, Afsurdagi, Mayoosi, Ghabrahat aur jhijak is par taari ho jati hai. khelon mein hissa lainay se qatrate hain, mashat zani se Jaryaan, Ahtelam, Saraat Inzaal aur Namardi tak ke amraaz peda ho satke hain. Maida kharab ho jata hai. Bhook mar jati hai. Raat ko wehshat naak khawab atay hain. Chehra har waqt be ronaqe rehta hai. Gaal pichak jatay hain aur ensaan zindah laash ban kar reh jata hai.”

اگر آپ کو یہ تحریر اچھی لگی ہے تو آپ کا حق بنتا ہے کہ اس پوسٹ کو سوشل میڈیا پر اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں تا کہ ان کی بھی بہتر طور پر رہنمائی ہو سکے۔

شیئر کریں