وسوسہ کیا ہے وسوسے کیوں آتے ہیں

وسوسہ برے ‏خیالات  اور شکوک وشبہات  کا نام ہے جسے شیطان انسان کے دل میں ڈالتا رہتا ہے۔‏ موجودہ دور کی منتشر بیماریوں میں وسوسہ بہت ہی خطرناک بیماری اور بڑی آفت ہے۔ وسوسے اس قدر خطرناک ہوتے ہیں کہ یہ انسان پر اس قدر حاوی ہو جاتے ہیں کہ تنگی و بے چینی، حسرت وندامت اورخوف ‏ودہشت کی وجہ سے بعض کمزور دل انسان  خود کشی پربھی آمادہ ہو جاتے ہیں۔

Waswasa buray khayala aur shukook o shabhat ka naam hai jisay shetan insan ke dil mein dalta rehta hai. Mojooda daur ki muntashir bimarion mein waswasa bohat hi khatarnaak bemari aur bari aafat hai. Waswasay is qader khatarnaak hotay hain ke yeh insan par is qader haawi ho jatay hain ke tangi o bay cheeni, hasrat o nadamat aur khouf o dehshat ki wajah se baaz kamzor dil insan khud kashi par bhi amaada ho jatay hain.

وسوسہ سے نہ صرف انسان کی زندگی خطرے سے دوچار ہوتی ہے بلکہ انسان کا ایمان بھی ختم ہو سکتا ہے۔ مثال کے طور پر یہ خیال آنا کہ کیا اللہ موجود ہے؟ اللہ کو کس نے پیدا کیا ؟ اسی طرح نماز ، روزے ،حج ، زکوۃ اور طہارت میں شک کرنا۔ یا پھر بہن بھائیوں اور بیوی کے متعلق بدگمانی اور وسوسوں میں مبتلا رہنا ۔یہ سارے شکوک وشبہات، اللہ ‏رب العالمین کے ساتھ بد گمانی کے سوا کچھ نہیں۔

Waswasa se na sirf insan ki zindagi khatray se dochar hoti hai balkay insan ka imaan bhi khatam ho sakta hai. Misaal ke tor par yeh khayaal aana ke kya Allah mojood hai? Allah ko kis ney peda kya? Isi tarah namaz, rozay, hajj, zkoh aur taharat mein shak karna. Ya phir behan bhaieyon aur biwi ke mutaliq badgumaani aur waswason mein mubtala rehna. Yeh saaray shukook Allah ke sath bad gumani ke siwa kuch nahi.

‏ وسوسہ آنے پر گھبرانا نہیں چاہیئے کیوں کہ حدیث پاک میں ہے کہ صحابہ نے نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا ہم اپنے دلوں میں کچھ ایسی باتیں پاتے ہیں کہ انہیں زبان پر لانا بھی ہمارے لیے بہت گراں ہے، کائنات کی مقدس ترین ہستی صلی اللہ علیہ وسلم کے دہن مبارک سے ارشاد ہوتا ہے کیا تم (واقعی) اس چیز کو پاتے ہو؟ وہ کہتے ہیں جی ہاں۔جواب ملتا ہے "یہی تو خالص اور صحیح ایمان ہے”(صحیح مسلم ،الایمان:132)

Waswasa aane par ghabrana nahi chaiye kyun ke Hadees Pak main hai ke Sahaba ne Nabi (SAW) se pocha hum apne dilon mein kuch aisi batin pate hain ke anhain zaban par lana bhi hamare liye bohat garan hai, Kainaat ke Maqadas tareen Hasti (SAW) ne irshad farmaya ke tum (waqiyahi) is cheez ko pate ho? wo kehte hain G Haan, jawab milta hai "Yehi to khalis awr sahi emaan hai”.

یعنی وسوسوں کا آنا خالص ایمان کے حامل لوگوں کی نشانی ہے ۔۔ چور اور ڈاکو اس گھر میں حملہ آور ہوتے ہیں جہاں خزانہ ہوتا ہے، اسی طرح شیطان بھی ڈاکہ زنی کے لیے ایسے دلوں کا انتخاب کرتا ہے جہاں دولت ایمان ہوتی ہے،اس لیے وسوسوں سے ڈرنے والا انسان بہت ہی نصیب والا ہے۔

Yani waswason ka aana khalis emaan ke hamil logon ki nashani hai, Choor aur Daako is ghar mein hamla awar hote hain jahan khazana hota hai, isi tarha shatain bhi daka zani ke liye ayese dilo ka intikhab karta hai jahan dolat emaan hoti hai, is liye waswason se darne wala insan bohat he naseeb wala hai.

حدیث میں ہے کہ جب تک ان وساوس کو زباں پر نہ لایا جائے ان پر عمل نہ کیا جائے تب تک گرفت نہ ہوگی(البخاری:2528 و مسلم 127/331) اگر آپ کو برے وسوسے آتے ہیں تو ہر ہر وسوسہ آنے پر آمنت باللہ و رسولہ (میں ایمان لایا اللہ اور اس کے رسول پر) پڑھنا چاہیے ۔

Hadees mein hai ke jab tak is waswasoon ko zaban par na laya jaye, in par amal na kya jay. Tab tak girift na ho gi. Agar ap ko buray waswasay aatay hain to har waswasa aane par آمنت باللہ و رسولہ (mein emaan laya Allah us ke Rasool (SAW) par) parhna chiye.

وسوسہ کیا ہے؟ برے خیالات اور وسوسے کیوں آتے ہیں، وسوسہ آئے تو کیا کریں، وسوسوں سے کیا مراد ہے۔ وسوسوں سے متعلق مکمل معلومات اردو میں۔

Waswasa kya hai Waswase kyun aate hain, buray khayalat aur waswasay aayen to kya karen, waswason se kya murad hai, waswason se matalaqat makamal maloomat Urdu mein.

اگر آپ کو یہ تحریر اچھی لگی ہے تو آپ کا حق بنتا ہے کہ اس پوسٹ کو سوشل میڈیا پر اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کریں تا کہ ان کی بھی بہتر طور پر رہنمائی ہو سکے۔

شیئر کریں